نواز شریف سزا یافتہ،عدالتی مفرور۔۔ وطن واپسی پر ممکنہ پروٹوکول کا جواز نہیں، پیپلز پارٹی

nawaz-sharis-sad 10

نواز شریف کو وطن پہنچ کر جیل میں قید کی مدت پوری کرنے کے بعد ہی الیکشن لڑنے کا سوچنا چاہیے۔سزا یافتہ نواز شریف کو پاکستان واپسی پر سرکاری پروٹوکول کا کوئی جواز نہیں ہے،اگر انہیں عدالتوں سے کلین چٹ مل رہی تو یہ سہولت دوسروں کو بھی دی جانی چاہیے، نواز شریف اور مولانا فضل الرحمان الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ترجمان نہ بنیں اور اسے اپنا کام کرنے دیں، حسن مرتضیٰ جنرل سیکریٹری پیپلز پارٹی پنجاب و دیگر کی پریس کانفرنس۔
حسن مرتضی و دیگر کا کہنا تھا کہ نگران حکومت کی بنیادی ذمہ داری انتخابات کا انعقاد ہے لیکن وہ اپنے اصل کام سے لاعلم ہے اور باقی تمام کام کر رہی ہے رہنما پی ٹی آئی سردار عظیم اللہ خان نے کہا کہ نواز شریف قانون ، انصاف کو روند کر بند کمرے میں طے کی گئی سازش کے تحت وطن واپس آ رہے . پیپلز پارٹی پنجاب کے جنرل سیکریٹری حسن مرتضیٰ نے گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ سربراہ مسلم لیگ (ن) نواز شریف 4 سالہ خود ساختہ جلاوطنی کے بعد ملک واپس آ رہے ہیں، انہیں جیل میں اپنی سزا مکمل کرنے کے بعد کوئی پروٹوکول ملنا چاہئےاور اس کے بعد وہ سیاسی سرگرمیو ں میں حصہ لیں سزا یافتہ نواز شریف کو پاکستان واپسی پر سرکاری پروٹوکول دینے کا کوئی جواز نہیں ہے، اگر انہیں عدالتوں سے کلین چٹ مل رہی ہے تو پھر یہ سہولت دوسروں کو بھی دی جانی چاہیے۔دیگر پارٹی رہنمائوں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے حسن مرتضیٰ نے کہا کہ نواز شریف پہلے وطن واپس پہنچ کر جیل میں اپنی قید کی مدت پوری کریں اور اس کے بعد ہی الیکشن لڑنے کا سوچیں۔حسن مرتضیٰ نے کہا کہ ایک بات نہیں بھولنی چاہیے کہ نواز شریف کے کندھوں پر مقدمات کا بہت بڑا بوجھ ہے اور وہ سزا یافتہ بھی ہیں۔انہوں نے نواز شریف اور سربراہ جے یو آئی (ف) مولانا فضل الرحمان کو مشورہ دیا کہ وہ الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کے ترجمان نہ بنیں اور اسے اپنا کام کرنے دیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں