پاک بھارت میچز کا شیڈول اور بارشیں،سوشل میڈیا صارفین نے جے شاہ کو دھو ڈالا

jay-shah 34

لاہور:ایشیا کپ 2023 میں پاک بھارت کرکٹ ٹیموں کے مابین اہم میچوں کی میزبانی کا فیصلہ ایشین کرکٹ کونسل(اے سی سی)کے صدر جے شاہ نے کیا تھا، جہاں اگلے دس دنوں تک بارش کی پیش گوئی کی گئی تھی۔ جے شاہ کو سوشل میڈیا پر زبردست تنقید کا نشانہ بنایا گیا اور مداحوں نے اپنی مایوسی کا اظہار کیا۔

شائقین اپنی مایوسی کا اظہار کرنے کے لیے سوشل میڈیا پرلکھا کہ جے شاہ اور ایک بھارتی لابی کی ساری مستی ہے ،کرکٹ کے تڑکے کو بارش سے بجھا دیا گیا ہے۔اس سے قبل جے شاہ نے جاری صورتحال پر توجہ دی اور ایشیا کپ 2023 کو پاکستان سے باہر منتقل کرنے کے فیصلے کے بارے میں بصیرت فراہم کی۔

جے شاہ نے جاری پریس ریلیز میں کہا کہ “تمام مکمل ممبران، میڈیا رائٹس ہولڈرز ابتدائی طور پر پاکستان میں پورے ٹورنامنٹ کی میزبانی کرنے کا عہد کرنے سے ہچکچا رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ “ایشیا کپ 2023 کے فارمیٹ اور مقام کے بارے میں فیصلہ سازی کا عمل کھلاڑیوں کی فلاح و بہبود کے ساتھ ساتھ کھیل کے بنیادی مفادات کو ترجیح دینے کی مخلصانہ خواہش سے رہنمائی کرتا تھا۔ بالآخر، مقصد ایک توازن قائم کرنا تھا۔
آئی سی سی کرکٹ ورلڈ کپ 2023 کے لیے حصہ لینے والی ٹیموں کی صحت اور تیاری کو یقینی بناتے ہوئے ایک مسابقتی اور کامیاب ٹورنامنٹ کی اجازت دے گا۔ غور طلب ہے کہ اگر ٹورنامنٹ کے بقیہ میچز بھی بارش کی نذر ہوئے تو پاکستان اور سری لنکا فائنل میں پہنچ جائیں گے کیوں کہ ان دونوں کے 4،4 پوائنٹس ہونگے۔
اس کے برعکس، بھارت تین پوائنٹس کے ساتھ سپر 4 پوائنٹس ٹیبل میں تیسرا مقام حاصل کرے گا، جبکہ بنگلہ دیش صرف ایک پوائنٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہو گا کیوں کہ اسے اپنے دونوں سپر 4 میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں