ججز کے 36کروڑ کے بلاسود قرضے کےخلاف درخواست سماعت کےلئے مقرر

judges-loan 16

لاہور: عدالتِ عالیہ کے 11 ججز کو 36 کروڑ روپے کے بلاسود قرضے دینے کی منظوری کے خلاف درخواست لاہور ہائی کورٹ میں سماعت کے لیے مقرر کرلی گئی۔ جسٹس شمس محمود مرزا نے شہری مشکور حسین کی جانب سے دائر درخواست کو اعتراضات ختم کرکے دوبارہ دائر کرنے کی ہدایت کی۔
عدالت نے رجسٹرار آفس کا درخواست گزار پر متاثرہ فریق ہونے کا اعتراض ختم کردیا اور ججز کو قرض دینے سے متعلق مصدقہ دستاویزات ساتھ لگانے کی ہدایت کردی۔ واضح رہے کہ رجسٹرار آفس نے مصدقہ دستاویزات ساتھ نہ لگانے کا اعتراض عائد کیا تھا ۔ شہری مشکور حسین کی جانب سے دائر کی گئی درخواست میں چیف سیکرٹری ،سیکرٹری فنانس سمیت دیگر کو فریق بنایا گیا ہے۔
درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ ججز کو بلاسود قرضہ فراہم کرنا غیر قانونی اقدام ہے ۔ ججز پہلے ہی بے شمار مراعات حاصل کررہے ہیں ۔ عوام کے ٹیکس کے پیسے کا نگراں حکومت بے دریغ استعمال نہیں کر سکتی ۔ عدالت نگراں حکومت کی جانب سے ججز کو قرضے دینے کی منظوری کالعدم قرار دے اور پٹیشن کے حتمی فیصلے تک ججز کو قرضے دینے کا اقدام معطل کیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں