90 روز میں الیکشن نہیں ہوتے تو نگراں حکومت کا مستقبل کیا ہوگا؟عدالت کا اہم سوال

lahore-high-court-old 210

لاہور: لاہور ہائیکورٹ نے نگراں پنجاب حکومت کو کام سے روکنے کیلئے درخواست سماعت کیلئے منظور کر لی۔عدالت نے وفاقی حکومت اور الیکشن کمیشن سمیت دیگر فریقین کو نوٹسز جاری کر دیئے۔عدالت نے استفسار کیا کہ اگر 90 روز میں الیکشن نہیں ہوتے تو نگراں حکومت کا مستقبل کیا ہوگا؟ جس پر وکیل اظہر صدیق نے کہا کہ اگر 90 روز میں الیکشن نہیں ہوتے تو نگراں حکومت ازخود ختم ہو جائے گی اور پرویز الہٰی بطور چیف منسٹر دوبارہ بحال ہوجائیں گے۔دوران سماعت اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل نے درخواست پر اعتراض کیا، جس پر جسٹس شاہد کریم نے پنجاب حکومت کے وکیل سے استفسار کیا کہ آپ کون ہیں؟ اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل نے جواب دیا کہ میں پنجاب حکومت کا نمائندہ ہوں اور جسٹس رضا قریشی اسی نوعیت کی درخواست کو خارج کر چکے ہیں۔جسٹس شاہد کریم نے ریمارکس دیئے کہ عدالت نگراں حکومت کو نوٹس نہیں کر رہی اور عدالت اس معاملے کو آئینی طور پر دیکھ رہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں