پی ٹی آئی رہنمائوں کی پریس کانفرنس، انتخابی ریلی سے متعلق کیا کیا؟

fawad-ch-shah-mehmood-qureshi-shabli-faraz-press 172

لاہور: پاکستان تحریک انصاف کے رہنمائوں شاہ محمود قریشی، فواد چوہدری، شبلی فراز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ نالائق ٹولہ چاہے جو بھی کر لے شکست ان کا مقدر ہے، پی ٹی آئی کسی تصادم کا حصہ نہیں ہے، تمام کارکنوں کو پرامن رہنے کی ہدایت دی گئی، کارکنوں کو ہدایت کی صبر کا پیمانہ نہ چھوڑیں، حکومت بوکھلاٹہ کا شکار ہے، حکومت تصادم کی آڑ میں انتخابات سے فرار چاہتی ہے، حکومت نے ریلی سے قبل دفعہ 144نافذ کر دی، دفعہ 144کا نفاذ الیکشن کمیشن میں چیلنج کر دیا ہے، دفعہ 144 کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں پٹیشن دائر کرینگے، وکلا نے دفعہ 144کےخلاف پٹیشن تیار کر لی ہے، حکومت گرفتاریوں کا جواز پیدا کرنا چاہتی ہے، حکومت کی سازشوں کا قانونی طریقے سے مقابلہ کرینگے، چیف جسٹس ہماری پٹیشن پر غور کریں، دفعہ 144 کے نفاذ کا پی ایس ایل سے دور دور تک تعلق نہیں، پی ایس ایل اور ہماری ریلی کے روٹ الگ الگ ہیں، پی ایس ایل شام 7بجے اور ہماری ریلی اس سے قبل ختم ہو جائے گی، فواد چوہدری نے کہا کہ آئین اور قانون خطرے میں ہے، چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ ہماری درخواست کا جائزہ لیں، دفعہ 144کے نفاذ کےخلاف ہماری درخواست سنی جائے، کیا صرف ن لیگ کو ریاستی سرپرستی میں سیاسی سرگرمیوں کی اجازت ہے؟ باقی سارے بوریا بستر لپیٹ کر ملک چھوڑ دیں؟ امید ہے چیف الیکشن کمشنر دفعہ 144کا نفاذ ختم کرینگے، سی سی پی او ، آئی جی ظل شاہ کے قتل میں ملوث ہیں، چیف الیکشن کمشنر ، چیف جسٹس کو ذمہ داریاں پوری کرنی چاہیے، سیاسی نقل و حرکت پر پابندی ہے تو الیکشن کیسے کرائیں گے؟ اداروں کو آئین کے دائرے میں ساتھ لےکر چلنا چاہتے ہیں، آئین کے مطابق سیاسی سرگرمیوں کی اجازت دی جائے، الیکشن شیڈول کے بعد داتا دربار پر بھی حاضری کی اجازت نہیں دے رہے،

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں