صرف 53ممالک نے کویڈ19کا ڈیٹا فراہم کیا ہے ، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن

World-Health-Organization 68

جینوا:ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن(ڈبلیو ایچ او)کے ڈائریکٹر جنرل ٹیڈروس ادانوم گیبریئس نے کہا ہے کہ 194میں سے صرف 53ممالک نے نئی قسم کی کورونا وائرس (کوویڈ 19)کی وبا سے ہونے والی اموات کا ڈیٹا فراہم کیا ہے، انہوں نے تمام ممالک سے ڈیٹا شیئر کرنے کی اپیل کی ہے،سوئٹزرلینڈ کے شہر جنیوا میں تنظیم کے ہیڈکوارٹر میں منعقدہ پریس کانفرنس میں گیبریئس نے کہا کہ دنیا کے ساتھ پہلا کووِڈ 19کیس شیئر کیے ہوئے 3 سال ہوچکے ہیں، اس عمل میں ٹیسٹ اور ویکسین تیار کی گئی ہیں،انہوں نے کہا کہ اومی کرون ویرینٹ کی اعلی ترین سطح پر پہنچنے کے بعد مشترکہ کیسز کی تعداد میں90فیصد کمی واقع ہوئی ہے، گیبریئس نے کہا کہ کیسز شیئر کرنے والے ممالک کی تعداد میں بھی ایک تہائی کمی واقع ہوئی ہے،انہوں نے کہا کہ دنیا ایک سال پہلے کے مقابلے میں وبا کے حوالے سے بہت بہتر صورتحال میں ہے،انہوں نے کہا کہ فروری سے، ڈبلیو ایچ او کی ہفتہ وار رپورٹ ہونے والی اموات میں 90فیصد کمی واقع ہوئی ہے لیکن ستمبر کے وسط سے، ہفتہ وار رپورٹ ہونے والی اموات کی تعداد 10اور 14کے درمیان ہے ۔ دنیا ان اموات کو قبول نہیں کر سکتی جب کہ ہمارے پاس ان کو روکنے کے لیے ہر ممکنہ ادویات اور آلات موجود ہیں، گزشتہ ہفتے وائرس کی وجہ سے 11 ہزار پانچ سواموات ہوئیں، گیبریئس نے بتایا کہ ان میں سے 40فیصد امریکہ میں اور 30فیصد یورپ اور مغربی بحرالکاہل کے علاقے میں واقع ہوئی ہیں ،انہوں نے کہا کہ 194میں سے صرف 53ممالک نے عمر اور جنس کے لحاظ سے مختلف اموات کے اعداد و شمار فراہم کیے ہیں ، اس وبا جس کے پھیلے ہوئے چار سال کا عرصہ ہوچکا ہے ہم تمام ممالک سے ڈیٹا شیئر کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں، ہمارے پاس جتنا زیادہ ڈیٹا ہوگاحقائق کو جاننے اور تصویر کو واضح کرنے کا موقع میسر آئے گا،انہوں نے کہا کہ ہم تمام ممالک سے خطرے سے دوچار گروپوں بالخصوص بوڑھوں کو ویکسین لگانے پر توجہ دینے کی اپیل کرتے ہیں اور تمام افراد کو صحت کے لیے ضروری اقدامات اختیار کرنے اور دوسروں کی حفاظت کے لیے تمام اقدامات اٹھانے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں