قوم کو مسائل سے نکالنے میں عدلیہ کردارادا کرے، شاہ محمود قریشی

Shah-mehmood-qureshi-media-talk-about-long-march 46

پاکستان تحریک انصاف کے سینئر رہنما شاہ محمود قریشی نے گجرات میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے ارکان اسمبلی سپریم کورٹ رجسٹریز میں دستخط شدہ پٹیشن پیر کی صبح دائر کریں گے،انہوں نے کہا کہ عمران خان پر حملے کے بعد بھی پارٹی نے اپنا مارچ جاری رکھنے کا فیصلہ کیا، چیلنجز کو سامنے رکھتے ہوئے عمران خان نے بہت بڑا فیصلہ کیا،ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں سیاسی عدم استحکام ہے جس سے تاجر برادری بہت پریشان ہے، سرمایہ کاری نہیں ہو رہی ہے، اس کا واحد راستہ الیکشن ہے.
شاہ محمودقریشی نے کہا کہ سینیٹر اعظم سواتی کو انصاف دیا جائے، ہماری درخواست کا دوسرا نکتہ ارشد شریف کی شہادت کامعاملہ ہے، قوم جاننا چاہتی ہے کہ ارشد شریف کے ساتھ کیا ہوا،ارشد شریف کی فیملی کو ان کی پوسٹ مارٹم رپورٹ نہیں ملی، ارشد شریف کا لیپ ٹاپ اور فون کہاں ہے؟ کس کے پاس ہے؟پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ تاثر تھا کہ کینیا کی پولیس کے پاس ہے، لیکن اب وہ بھی انکاری ہیں،انہوں نے کہا کہ سائفر کے بارے میں پی ٹی آئی کا موقف سب کے سامنے ہے، اس کی اہمیت سے کوئی انکار نہیں کرسکتا.
انہوں نے بتایا کہ ایف آئی اے نے ایک نوٹس بھیجا ہے کہ میں وہاں پیش ہو جائوں، ہماری پٹیشن میں چوتھا نکتہ ایف آئی آر کے حوالے سے ہے کہ کیا حملے کی ایف آئی آر کٹوانے کا حق نہیں؟ پولیس کی مدعیت میں جو ایف آئی آر درج کرائی گئی اس کی کوئی قانونی حیثیت نہیں، کاغذ کا ٹکڑا ہے.
شاہ محمود قریشی نے کہا کہ عمران خان پارٹی میں سب کی بات سنتے ہیں، تحریک انصاف میں معاملات جمہوری طریقے سے چلائے جاتے ہیں، پارٹی پالیسی سے ہٹ کر بیان دینے پر شوکاز نوٹس نہیں دے سکتے؟شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ جن لوگوں کیخلاف کارروائی ہوئی وہ پارٹی پالیسی کے تحت کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں